...................... .................

کتابیں

”لمس کی چْپ“ میں محبت، احساس اور رشتوں کا تقدس…… حنا حورین شاہد

طارق بلوچ صحرائی ادب کے افق پہ چمکتا ایسا ستارہ، جو کسی تعارف کا محتاج نہیں۔ مجھے اس نام سے آشنا ہوئے چند ماہ ہی ہوئے ہیں اور اس تاخیر کے لیے میں خود پر افسوس ہی کر سکتی ہوں۔ میری بہت پیاری دوست عائشہ عبدالغنی نے مجھے ان کی کتاب ”سوال کی موت“ بطور تحفہ عنایت کی تو لفظوں ...

مزید پڑھیں »

ممسوح کی شاعری میں ”دائمی محبت“…… وحید عزیز

شاعری جذبات کے اظہار کااعلیٰ ترین ذریعہ ہے۔اس لیے کہ شاعری احساس کے پکے رنگوں میں ڈھل کرسوچ کے معیار کی نمائندگی کرتی ہے۔شاعری حساس دل کی ترجمان،معصوم سوچ کی خاموش صدا،مقدس جذبات کا احساس،چاہت کانازک پیرہن، محبت کازرق برق لباس شاعری کے ترنم میں پنہاں ہے۔ ہردورمیں شاعری کے اپنے تقاضے ہوتے ہیں، ضرورت ہوتی ہے۔اس لیے کہ شاعری ...

مزید پڑھیں »

سوہنا شہر لاہور…… میم سین بٹ

سوہنا شہر لاہور ادیب، شاعر اور براڈ کاسٹرطاہر لاہوری کی اپنے شہر پر لکھی جانے والی کتاب ہے جسے سنگ میل نے 1994ء میں شائع کیا تھا مصنف کتاب کے دیباچے میں لاہور شہر کا مختصر تاریخی پس منظر بیان کرتے ہیں اور مختلف ادوار کا سرسری جائزہ لیتے ہوئے آخر میں انگریز دور کی تعریف کرتے ہیں تاہم وہ ...

مزید پڑھیں »

لاہور کی ٹھنڈی سڑک…… میم سین بٹ

لاہور پر کتابیں لکھنے والے صرف چند مصنفین کو شہر بے مثال کا جم پل قرار دیا جا سکتا ہے ان میں سید محمد لطیف،حکیم احمد شجاع،عبداللہ ملک،یونس ادیب، طاہر لاہوری، انیس ناگی،مجید شیخ،ڈاکٹر اعجاز انور، ممتاز راشد اورنعیم مرتضےٰ وغیرہ کے نام لئے جا سکتے ہیں، بیشتر لکھاریوں نے باہر سے آکر لاہور شہرپر کتابیں لکھی تھیں جن میں ...

مزید پڑھیں »

مٹتا ہوا لاہور…… میم سین بٹ

لاہور پرمختلف انداز میں کتابیں لکھی گئی ہیں، ایچ آر گولڈنگ، ٹی ایچ تھارنٹن، مولوی محرم علی چشتی، کنہیا لال ہندی، سید محمد لطیف، کرنل بھولا ناتھ وارث، ڈاکٹر محمد باقر، پروفیسر جمیل خان، راؤجاوید اقبال اور مدثر بشیر وغیرہ نے لاہور کی تاریخ و جغرافیہ،حکیم احمد شجاع نے بھاٹی گیٹ، یونس ادیب اور طاہر لاہوری نے اندرون شہر، ڈاکٹراعجاز ...

مزید پڑھیں »

میرا شہر لاہور…… میم سین بٹ

لاہور پاکستان کے تمام شہروں میں اس لحاظ سے منفرد شہر ہے کہ اس پر اردو، پنجابی، فارسی اور انگریزی میں تقریباََ پانچ درجن کتابیں شائع ہو چکی ہیں جن میں سے چار درجن سے زائد کتابیں ہم نہ صرف پڑھ چکے ہیں بلکہ ان پر کالم میں تبصرہ بھی کر چکے ہیں۔ لاہور شہر پر سب سے بہترین کتاب ...

مزید پڑھیں »

لاہور کا کافی ہاؤس…… میم سین بٹ

لاہور کا کافی ہاؤس دانشور طبقے کا اہم مرکز رہا تھا جہاں کافی کی پیالی پر ادب، آرٹ، ثقافت اور سیاست سمیت ہر موضوع پر گفتگو ہوتی تھی۔ وکلاء اور سیاستدانوں کی وجہ سے کافی ہاؤس میں زیادہ تر سیاسی موضوعات زیر بحث رہتے تھے یہاں بیٹھنے والے بیشتر ادیبوں، شاعروں، دانشوروں کا تعلق ترقی پسند تحریک سے تھا اس ...

مزید پڑھیں »

لاہور تجھے سلام…… میم سین بٹ

لاہور شہر پر بہت سے لوگوں نے کتابیں لکھی ہیں جن میں انہوں نے شہر بے مثال کو بھر پور خراج تحسین پیش کیا ہے لیکن سابق بیوروکریٹ قیصر امین الدین ان سب سے انوکھے ہیں۔ انہوں نے چند برس قبل ”لاہور تجھے سلام“ کے عنوان سے کتاب لکھی تھی جس میں ان کا دعویٰ تو یہی ہے کہ انہیں ...

مزید پڑھیں »

لاہور کا چیلسی…… میم سین بٹ

’لاہورکا چیلسی‘ حکیم احمد شجاع کی اپنے آبائی محلے بھاٹی دروازے کے حوالے سے تحریر کردہ کتاب ہے۔ وہ مترجم، افسانہ نویس، فلم نگار، شاعر، صدا کار اور ڈرامہ نگار تھے۔ انہیں آغا حشر کاشمیری کی شاگردی کا اعزاز حاصل تھا۔ حکیم احمد شجاع کو بمبئی اور کلکتہ کی تھیٹریکل کمپنیوں کے مالکان سے آغا حشر کاشمیری نے ہی متعارف ...

مزید پڑھیں »

یہ ریڈیو لاہور ہے…… میم سین بٹ

لاہورسے صرف مشرقی پنجاب ہی نہیں یوپی، سی پی کے بعض مہاجر دانشوروں کو بھی بہت زیادہ لگاؤ رہا ہے اور انہوں نے تقسیم ہند کے بعد کراچی کے بجائے لاہور میں مقیم رہنا پسند کیا تھا۔ ان اردو داں مہاجر ادیبوں، شاعروں اور نقاد دانشوروں میں سے ڈاکٹر عبادت بریلوی اور پروفیسر وقار عظیم کے بارے میں تو کہا ...

مزید پڑھیں »