...................... .................

اقبال ورومی

از محبت تلخ ہا شیریں شود…… مولانارومؒ

از محبت تلخ ہا شیریں شود از محبت مسّہا زرّیں شود محبت کی وجہ سے کڑوی چیزیں میٹھی ہو جاتی ہیں محبت سے مختلف تانبے سونا بن جاتے ہیں از محبت دُرد ہا صافی شود و ز محبت درد ہا شافی شود محبت سے تلچھٹیں صاف ہو جاتی ہیں اور محبت سے درد شفا بخشنے والا بن جاتا ہے از ...

مزید پڑھیں »

بھینگا شاگرد، استاد اور آئینہ

ایک استاد نے اپنے ایک بھینگے شاگرد سے کہا، میرے گھر جاؤ۔ گھر کے فلاں طاق میں ایک شیشہ رکھا ہوا ہے۔ وہ لے آؤ۔ شاگرد گیا۔ طاق میں اسے اپنے بھینگے پن کے باعث دو شیشے نظر آئے۔ واپس آکر استاد سے کہنے لگا۔ جناب! طاق میں تو دو شیشے پڑے ہیں۔ کون سا شیشہ لاؤں۔ استاد نے کہا۔ ...

مزید پڑھیں »

اقبال ؒ، رمضان عطائی اور عشقِ رسول ؐ

”اور کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جنہیں چُن لیا جاتا ہے۔ اللہ انہیں اپنی بے پایاں عنایات کی آغوش میں لے لیتا ہے۔ صحابہ کرام ؓ تو حضور ﷺ کی قربتوں اور اس عہدِ سعید کی برکتوں سے براہِ راست فیض یاب ہوئے، مگر ایسے بامراد ہر دور میں گزرے ہیں، جن کے دلوں میں عشقِ رسول ؐ کا ...

مزید پڑھیں »

علم وعشق کا ملاپ: شمس ورومی ؒ کی پہلی ملاقات

شمس تبریزی ؒ اور مولانا جلال الدین رومی ؒ کی ملاقات کے حالات بہت دلچسپ ہیں۔ ایک دن بابا کمال جندی ؒ نے اپنے مریدوں سے مخاطب ہو کر کہا کہ: ”دعوت کرنا چاہتا ہوں جس سے جو کچھ ہو سکے لائے“۔ حضرت شمس تبریز ؒ جوتا اُتارنے کی جگہ پر کھڑے ہوئے تھے یہ سن کر رونے لگے۔ بابا ...

مزید پڑھیں »

اقبال ؒ بے مثال!…… سید ثمر احمد

اقبال ؒ دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے۔ گزشتہ دو، تین سالوں سے لاکھوں اشعار میسیجز کی صورت میں، فیس بک اور ٹویٹر پر بھیجے جا رہے ہیں۔ پڑھنے کے بعد اگلا مرحلہ ہمیشہ سمجھنے کا ہوتا ہے۔ میں نے ایک سال تک اقبال ؒ کو بے سمجھے پڑھا۔ کلیات ِاقبال کامل ایک سال تک میری بیڈ بک ...

مزید پڑھیں »

جناب! وہ دوا تو پاگلوں کیلئے ہے!

جالینوس نے ایک دن اپنے شاگروں سے کہا کہ مجھے فلاں دوا فوراً لا کر دو۔ تا کہ میں کھاؤں۔ شاگردوں نے کہا جناب! وہ دوا تو پاگلوں کے لیے ہے۔ جسے جنون لاحق ہو اسے استعمال کرائی جاتی ہے۔ خدا نہ کرے کہ آپ کو اس دوا کی ضرورت پڑے۔ جالینوس نے کہا تم وہی دوا لا کر مجھے ...

مزید پڑھیں »

عاشق اور محبوب کا دروازہ

ایک عاشق نے اپنے محبوب کے گھر کے دروازے پر آکر دستک دی اور کہا دروازہ کھولو۔ محبوب نے پوچھا کون ہے؟ عاشق بولا”میں تمہارا عاشق صادق۔“۔ محبوب نے کہا تو ابھی سچا عاشق نہیں، تجھ میں ابھی ”میں“ باقی ہے۔ جب تک تم میں ”میں“ باقی رہے گی تم کامیابی سے دور رہو گے۔ تمھارے خام ہونے کی یہی ...

مزید پڑھیں »

شہرِمحبوب اورعاشق

ایک معشوق نے اپنے عاشق سے پوچھا کہ تم نے تلاش محبوب میں سینکڑوں شہروں کی خاک چھانی ہے بتاؤ کہ تمہیں کون سا شہر پسند ہے؟ عاشق نے جواب دیا ”جس شہر میں تم رہتے ہو“ ہر کجا یوسف رخے باشد چو ماہ! جنت است آں گرچہ باشد قعرچاہ جہاں چاند جیسا خوبصورت یوسف ہو وہ جگہ چاہے کنواں ...

مزید پڑھیں »

انگور، چار اندھے اور بغداد کا بازار

بغداد کے بازار میں چار اندھے بھیک مانگ رہے تھے۔ ایک اندھا عرب کا تھا۔ دوسرا ایران کا، تیسرا ترکی اور چوتھا ہندی تھا۔ ایک شخص نے ان چاروں اندھوں کو ایک روپیہ دیا۔ اور کہا جاؤ۔ ایک روپیہ کی کوئی چیز لے کر چاروں آپس میں بانٹ لو۔ روپیہ لے کر چاروں مشورہ کرنے لگے کہ روپیہ کا کیا ...

مزید پڑھیں »