...................... .................

پاکستانی موٹی ماڈل کے دلکش انداز پر لوگوں کی تنقید

ہمارے سماج میں ماڈلنگ میں کامیابی کے لیے چہرے کے تاثرات کے اظہار پر عبور اور فن اداکاری کی سوجھ بوجھ کے بجائے حسن، نزاکت اور دبلا پتلا ہونا شرط ہے اگر کوئی فربہ اندام خاتون ماڈلنگ کی دنیا میں قدم رکھ لے تو اسے معیوب سمجھا جاتا ہے۔
فائزہ سلیم یوں تو فن مزاح میں اپنا لوہا منوا چکی ہیں ان کا تعارف انڈسٹری میں بطور کامیاب کامیڈین ہے لیکن نہ جانے بیٹھے بیٹھے انہیں کیا سوجی کہ ایک آن لائن فیشن برانڈ کے لیے ماڈلنگ کرلی۔ مداحوں کی اکثریت نے پہلے تو اسے کامیڈی کے طور پرلیا لیکن جب حقیقت کا پتا چلا تو سارے چاہنے والے ایک دم ناقد بن گئے۔

فائزہ سلیم نے دلکش انداز کے ملبوسات کو زیب تن کیا تو جیسے طوفان کھڑا ہوگیا، سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصاویر میں صارفین نے خوب جملے کسے اور تنقید کا نشانہ بنایا۔ موٹی، ڈھول اور بد ہیئت جیسے القاب سے جی نہ بھرا تو ایک صارف نے استغفراللہ بھی کہہ ڈالا۔
صارفین کے تبصروں سے یہ بات سچ ثابت ہوجاتی ہے کہ حسن اور خوبصورتی کے حوالے سے اب تک ہمارے معاشرے میں بوسیدہ خیالات کا ڈیرہ ہے اور کوئی بھی ان پر نظر ثانی کرنے کو تیار نہیں تاہم فائزہ سلیم اور ان کی ٹیم لوگوں کے نظریات تبدیل کرنے کے لیے پُرعزم ہیں۔

جواب لکھیں