...................... .................

عمران خان کی عالمی ذرائع ابلاغ پر سخت تنقید

وزیراعظم عمران خان نے عالمی میڈیا کے دوہرے معیار پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عالمی میڈیا ہانگ کانگ میں احتجاج تو دکھا رہا ہے لیکن مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کو نظر انداز کر رہا ہے۔
ایچ ٹی وی پاکستان کی رپورٹ کے مطابق، وزیراعظم عمران خان نے سوشل میڈیا پر جاری اپنے بیان میں کہا کہ عالمی میڈیا کے دوہرے معیار پر حیرت زدہ ہوں کیونکہ وہ ہانگ کانگ کے مظاہروں پر تو شہ سرخیاں جماتا ہے مگر کشمیر میں انسانی حقوق کے سنگین بحران سے نظریں چرا لیتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ کشمیر عالمی طور پر تسلیم شدہ متنازع علاقہ ہے جس پر بھارت نے 9 لاکھ فوجیوں کے مدد سے 80 لاکھ کشمیریوں کو محصور کر کے غیر قانونی طور ہر قبضہ کر رکھا ہے۔
عمران خان نے عالمی میڈیا کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اپنے ٹوئٹ میں مزید کہا کہ 2 ماہ سے زائد عرصے سے ذرائع ابلاغ کی مکمل تالہ بندی، بچوں اور سیاسی قائدین سمیت ہزاروں کو قید میں ڈال کر کشمیر میں انسانی المیے کو جنم دیا جا رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ تین دہائیوں میں حق خودارادیت، جس کا سلامتی کونسل کی قرادادوں کے ذریعے وعدہ کیا گیا تھا اس کے لیے جدوجہد کرنے والے ایک لاکھ کشمیری قتل کیے جا چکے ہیں۔
خیال رہے کہ 5 اگست کو بھارت کی ہندو انتہا پسند حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے مقبوضہ کشمیر کو خصوصی حیثیت دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 ختم کر کے جموں و کشمیر اور لداخ کو زبردستی بھارتی یونین کا حصہ بنا دیا تھا۔
تاہم پاکستان نے بھارت کے اس اقدام کو مسترد کرتے ہوئے عالمی سطح پر مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لیے آواز اٹھائی۔
وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے 74 ویں جنرل اسمبلی اجلاس میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کرتے ہوئے 50 منٹ کی طویل تقریر میں ماحولیاتی تبدیلی، منی لانڈرنگ، اسلام ور مسلم مخالف جذبات اور مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر روشنی ڈالی۔

جواب لکھیں