...................... .................

راہول گاندھی 20 دن سے کرفیو توڑنے مقبوضہ کشمیر روانہ

مودی سرکار کی دھمکیوں کے باوجود راہول گاندھی دیگر اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ نئی دلی سے سری نگر کے لیے روانہ ہوگئے ہیں جہاں 5 اگست سے مسلسل کرفیو نافذ ہے۔
بھارتی میڈیا کے مطابق کرفیو نافذ ہونے کے باوجود راہول گاندھی، غلام نبی آزاد اور دیگر اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ آج سری نگر پہنچیں گے جہاں وہ کشیدہ صورت حال کا جائزہ لیں گے اور مسلسل کرفیو میں محصور شہریوں کے وفد سے بھی ملاقات کریں گے۔
دوسری جانب مودی سرکار نے اپوزیشن رہنماؤں کی کشمیر آمد کو قانون کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ کرفیو زدہ علاقے میں داخل ہونا قانون توڑنے کے مترادف ہوگا جس پر قانون حرکت میں آئے گا۔


ادھر سابق وزیراعلیٰ کشمیر اور موجودہ اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے حکومت کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ بنیادی حقوق کی فراہمی بند کرکے لوگوں کو محصور کرنا قانون ہے تو ہم اس قانون کی خلاف ورزی کرنے ہی جارہے ہیں۔
واضح رہے کہ 5 اگست کو مودی سرکار نے آئین کے آرٹیکلز 35-اے اور 370 کو منسوخ کرکے مقبوضہ کشمیر کو دو حصوں کو میں تقسیم کرکے بھارتی یونین ٹریریٹری قرار دے دیا تھا اور کسی ممکنہ احتجاج سے بچنے کے لیے 5 اگست سے مسلسل کرفیو نافذ کر رکھا ہے۔

جواب لکھیں

%d bloggers like this: