...................... .................

شمالی وزیرستان میں سرحد پار سے دہشتگردوں کا حملہ، 6 جوان شہید

شمالی وزیرِستان میں پاک-افغان سرحد پر اپنے فرائض انجام کی انجام دہی کرنے والے سیکیورٹی اہکاروں پر افغانستان سرحد سے حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں 6 جوان شہید ہوگئے۔ حملہ ضلع شمالی وزیرستان کے سرحدی حصے پر اس وقت کیا گیا جب سیکیورٹی اہلکار گشت پر مامور تھے۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق شہید ہونے والوں میں حوالدار خالد، سپاہی نوید، سپاہی بچل ، سپاہی علی رضا سپاہی محمد بابر اور سپاہی احسن شامل ہیں۔ آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں کی جانب سے یہ حملہ افغانستان کے علاقے گردیز سے کیا گیا۔
اسی طرح کا واقعہ رواں برس 30 اپریل اور یکم مئی کی درمیانی شب پیش آیا، جب 70 سے 80 دہشت گردوں نے افغانستان کے ضلع گیان اور برمل سے سرحد عبور کرکے پاکستان میں داخل ہوئے اور شمالی وزیرستان میں سرحد پر باڑ لگانے میں مصروف پاک فوج کے جوانوں پر حملہ کردیا۔
پاکستانی سیکیورٹی اہلکاروں کی بروقت جواب کارروائی کے سبب دہشت گرد واپس افغانستان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔
واقعے پر احتجاج کرتے ہوئے دفتر خارجہ نے افغان ناظم الامور کو طلب کرکے ریکارڈ درج کروایا۔ اس حوالے سے دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ دہشت گرد افغانستان کی طرف سیکیورٹی انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔

جواب لکھیں

%d bloggers like this: