...................... .................

میں ملکہ ہوں میرے جذبوں کی اپنی راجدھانی ہے

میں ملکہ ہوں میرے جذبوں کی اپنی راجدھانی ہے
مگر جی چاہتا ہے اس کی میں جاگیر بن جاؤں
وہ خود رانجھا نہیں بنتا مگر مجھ سے توقع ہے
میں پیالہ زہر کا پی لوں میں پھر اک ہیر بن جاؤں

جواب لکھیں