...................... .................

بھارت میں مسلمانوں اور عیسائیوں کے کیخلاف نفرت کی پالیسی اپنائی گئی ہے: وزیراعظم

ویب ڈیسک: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں اور عیسائیوں کے کیخلاف نفرت کی پالیسی اپنائی گئی ہے، بھارت نے جو راستہ اپنایا ہے قومیت کا یہ دعویٰ انہیں پیچھے ہٹنے نہیں دے گا۔

اسلام آباد میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ بھارت اس وقت ایک بڑی مشکل میں پھنس گیا ہے، بھارت انتہا پسندی کے راستے پر نکل پڑا ہے جس کا اسے بہت نقصان ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ حالات بگڑے نہیں، مشکلات کا ڈٹ کر مقابلہ کیا قوم پر فخر ہے، ہم نے پاکستان کی اونچ نیچ دیکھی ہے، قوم کی پہچان ہوتی ہے کہ وہ کیسے مشکل وقت کا سامنا کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پلواما واقعے کے بعد اندازہ تھا بھارت کچھ کرے گا، صبح 3 بجے ایئرچیف کا فون آیا کہ بھارت نے جارحیت کی ہے، بھارتی جارحیت کا جیسے جواب دیا، دنیا ہمیشہ یاد رکھے گی۔

وزیراعظم نے کہا کہ بھارتی جارحیت کا اس سے بڑا منہ توڑ جواب دے سکتے تھے، بھارتی آبدوز کو واپس بھیجا اس وقت بھی بہت کچھ کرسکتے تھے، بھارتی گرفتار پائلٹ کو واپس کیا، سنجیدہ قوم ہونے کا ثبوت دیا۔

عمران خان نے کہا کہ بھارت نے آرایس ایس آئیڈیالوجی اپنالی ہے، تاریخ دیکھ لیں جب بھی ایسی پالیسی اپنائی گئی وہاں خون ہی ہوا، نفرت کی پالیسی بنائیں گے اور مذہبی انتہاپسندی پر چلیں گے تو نقصان ہو گا۔

جواب لکھیں

%d bloggers like this: